یتیم کی کفالت

یتیم کی کفالت

یتیم کی کفالت

والد کا سایہ سر سے آٹھ جائے تو بچوں کی زندگی ادھوری ہو جاتی ہے۔ وہ معصوم اس بات کا ادراک نہیں کر پاتے کہ ان کے والد جو ان کے آس پاس موجود تھے اچانک کہاں چلے گئے ؟ ان کی محدود عقل یہ سمجھنے سے قاصر ہو تی ہے کہ جب دوسرے بچوں کے والد ان کے پاس موجود ہیں تو ان کے والد کہاں چلے گئے ؟

ایسے بچوں کا تعلق اگر کھاتے بیتے گھرانوں سے ہو تو ان کے تعلیم و تربیت احسن طریقے سے جاری رہتی ہے لیکن بہت غریب گھرانے کے بچے کے والد کا سایہ سر سی اُٹھ جائے تو اکثر تعلیم کا سلسلہ رک جاتا ہے اور ہوٹلوں پر برتن صاف کرنا ورکشاپوں میں کام کرنا، بھیک مانگنا یا بہت پست سطح کی مزدوری ایسے بچوں کا مقدر بن جاتی ہے۔ بسا اوقات انہی میں سے کچھ بچے جرائم پیشہ افراد کے ہتھے چڑھ جاتے ہیں اور ریاست کی غفلت مجرموں کی تعداد میں اضافے کا سبب بن جاتی ہے۔

ORSP (7)

آیئے آپ بھی اس کارِخیر میں حصہ لیکر ایک یتیم بچے کی ماہانہ 25 پاؤنڈ سے کفیل بنیئے۔

اُمہ ویلفیئر ٹرسٹ نے ایسے بچوں کی سرپرستی کا ایک پروگرام ترتیب دیا تا کہ انہیں اور ان کی بیوہ ماوٗں کو ریلیف مل سکے۔ اس پروگرام کے تحت پاکستان، افغانستان اور کشمیر کے 2،470 یتیم بچوں کیلئے تعلیم تک رسائی کا حصول ممکن بنایا جا رہا ہے۔ ہر یتیم بچے کو پروجیکٹ کے تحت ماہانہ کی بنیاد پر 25 پاؤنڈ وظیفہ ملتا ہے تاکہ وہ اپنی تعلیم جاری رکھ سکیں۔

25 پاؤنڈ ماہانہ سے

ایک یتیم بچے کی کفالت